نگران وزیراعظم کے معاملے پر شہباز شریف اور اپوزیشن لیڈر کی پہلی ملاقات بے نتیجہ

اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض اور وزیراعظم شہبازشریف کے درمیان نگران وزیر اعظم کے نام پر اتفاق نہ ہوسکا اور آج  ہونے والی مشاورتی ملاقات بے نتیجہ ختم ہوگئی۔

وزیراعظم سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو میں اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض نے بتایا کہ اچھے ماحول میں ملاقات ہوئی لیکن اب تک کسی نام پر اتفاق نہیں ہوسکا، فیصلہ ہوا ہے کہ کل پھر ایک نشست ہوگی۔

اس حوالے سے وزیراعظم آفس کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ وزیرِ اعظم شہباز شریف سے  قائدحزب اختلاف راجہ ریاض کی ملاقات وزیراعظم ہاؤس میں ہوئی، وزیرِ اعظم اور قائد حزبِ اختلاف کے درمیان نگران وزیرِ اعظم کے ناموں پر مشاورت کا پہلا دور ہوا، فیصلہ کیا گیا کہ قومی معاملے پر مزید سوچ بچار  کے  بعد کل 11 اگست کو دوبارہ مشاورت کی جائے گی۔

وزیر اعظم آفس کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق وزیرِ اعظم نے قائدحزب اختلاف کو  نگران وزیرِاعظم کی تقرری کیلئے مشاورت سے متعلق ملاقات کی دعوت دی تھی۔

خیال رہے کہ قومی اسمبلی تحلیل کے بعد آئین کےآرٹیکل224 اے کے تحت نگران وزیراعظم کا تقرر ہوگا، وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر نگران وزیراعظم کے لیے مشاورت کریں گے اور اسمبلی تحلیل ہونےکے بعدنگران وزیراعظم کا نام فائنل کرنےکےلیے 3 دن کا وقت ہوگا۔

تین دن میں نام فائنل نہ ہونے پر معاملہ پارلیمانی کمیٹی کے پاس چلا جائے گا، وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر اپنے اپنے نام اسپیکر کی پارلیمانی کمیٹی کوبھیجیں گے اور پارلیمانی کمیٹی تین دن کے اندر نگران وزیراعظم کا نام فائنل کرے گی۔

پارلیمانی کمیٹی کے نگران وزیراعظم کا نام فائنل نہ کرنے پر معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس جائے گا اور الیکشن کمیشن دیے گئے ناموں میں سے دو دن کے اندر نگران وزیراعظم کا اعلان کرے گا۔